Tips & Suggestions

Medical benefits of snake

Medical benefits of snake

Medical benefits of snake

سنگھاڑے کی آج سے ہزاروں برس قبل بھارت کے صوبہ اُتر پردیش کے ضلع آگرہ میں دریائے جمنا کے نزدیک ایک پرانے تالاب میں قدرتی طور پر پیدوار شروع ہوئی۔1895ء میں کافی تحقیق و تجربات کے بعد اسے طب میں شامل کر لیا گیا۔سنگھاڑا پاکستان کے مختلف علاقوں میں کاشت کیا جاتا ہے ۔یہ ایک بیل دار پھل ہے ۔اس کا پودا تالابی پودا کہلاتا ہے ،جو جھیلوں ،جو ہڑوں اور بڑے تالابوں میں تیرتا ہوا دکھا ئی دیتا ہے ۔

اس کی بیل پانی کے اوپر رہتی ہے ۔
پتے سبز اور بڑے ہوتے ہیں ،جن پر باریک رگیں ہوتی ہیں ۔پودے کی جڑ میں پھل لگتا ہے اور جڑ پانی کی گہرائی تک چلی جاتی ہے ۔جن تالابوں میں پانی کم ہوتا ہے ،وہاں سنگھاڑے کی پیداوار زیادہ ہوتی ہے ۔اس کا پودا اکتوبر سے دسمبر تک پھل دیتا ہے ۔

پودے پر نیلے اور سفید پھول آتے ہیں ،جو بہت خوب صورت دکھائی دیتے ہیں ۔

سنگھاڑے میں لحمیات (پروٹینز)13فی صد ،چکنائی 8فی صد، نشاستہ (CARBOHYDRATE) 70 فی صد ،نمکیات 13فی صد ،کیلسےئم15فیصد ،فاسفورس 44فیصد ،حیاتین الف (وٹامن اے )190فی صد اور گلوکوس 8فی صد ہوتی ہے ۔سنگھاڑے کو روزانہ 30سے 50گرام کی مقدار میں کھایا جا سکتا ہے ۔اس کا ذائقہ پھیکا ہوتا ہے ،جب کہ ایک اُبلے ہوئے سنگھاڑے کا ذائقہ دیسی انڈے کی طرح ہوتا ہے ۔

سنگھاڑا ہضم کے نظام کو طاقت دیتا ہے ۔دیر سے ہضم ہوتا ہے ۔بوڑھے ،جوان اور عورتوں کے لیے مفید ہے ۔ہاضمے کی خرابی اور جگر کی گرمی کو دُور کرتا ہے ۔کمر کے درد سے نجات دلاتا ہے ۔پیاس کی شدت کو کم کرتا ہے ۔بلڈ پریشر پر قابو پانے میں مدد دیتا ہے۔جِلد کو نرم و ملائم اور چمک دار بناتا ہے ۔کھانسی اور دق وسِل (ٹی بی )کے خاتمے میں مفید ثابت ہوتا ہے ۔جسم کی کمزوری دُور کرتا ہے ۔

جن لوگوں کو مزاج گرم ہو اور وہ اپنے ہاتھ پاؤں میں جلن محسوس کرتے ہوں ،جن کے جسم پر عام طور پر پھوڑے اور پھنسیاں نکلتی ہوں یا جنھیں منھ پکنے کی تکلیف ہوجاتی ہو،ایسے لوگوں کو کھانا کھانے کے دو گھنٹے بعد کچے سنگھاڑے کھانے چاہییں یاروزانہ چند دنوں تک سنگھاڑے کا مربّہ کھائیں ۔

سنگھاڑا عورتوں کے پیچیدہ امراض دُور کرنے میں بہت مفید ہے ۔سیلان الرحم کے عارضے میں مبتلا خواتین کو اگر خشک سنگھاڑے کا آٹا بطور حلوا بنا کر کھلایا جائے تو اس مرض سے جلد چھٹکارا مل جاتا ہے ۔
یہ حاملہ عورتوں کو بھی بے دھڑک کھلا یا جا سکتا ہے۔اسے کھانے سے کوئی نقصان نہیں ہوتا،بلکہ ان کے جسم میں توانائی آجاتی ہے۔

Thousands of years ago, a natural pond near the river Jamna in Aurra district of India, thousands of years ago, started naturally in the year 1895 after the research and experiments were included in the medicine. It is cultivated in different areas .It is a bull fruit. Its plants are called pudding plants, which show that the lakes, which float in the ponds and the big pools.

His bull is above the water.
The leaves are green and big, which have vein veins .The fruit of the tree takes fruit and goes to the depths of root water .The water is low in the pools, there is more production of the gravel. Returns fruit from October to December.
Blue and white flowers come on the plants, which look very well.

The protein is 13%, greasy 8%, carbohydrate (70%), salty 13%, calcium 15%, phosphorus 44%, hayatin A (vitamins A), 190% and glucose 8% .Shraddle is 30 to 50 grams daily The amount of food can be eaten. Its taste is fried, when a boiled bean is like a desi egg.

The sunglasses strengthens the digestive system .Very is digestive .Used for young, young and females .Everyone removes the heat and the heat of the liver .Kemerizes the pain of the camera. Reduce the severity of the stress Helps in controlling blood pressure. Makes soft skin smooth and smooth. It proves useful in eliminating cancer and fat (TB).

Removes the weakness of the body.Medical benefits of snake
People who have a warm temperament and feel burnt in their hands feet, whose bodies usually get trapped and trapped or who suffer from cooking, people eat food after two hours after eating them. Should Uruguay Eat a Seafood for a few days?

It is very useful for removing complicated diseases of Sangharh women. If women suffering from Sialan Urm are fed as dry as dough, they get rid of the skin quickly.
This pregnant women can also be unhealthy or cancellated. It does not harm any food, but it enhances energy in their body.

sourceUrduPoint.com

Tags

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Back to top button
Close
Close